آج کی بات

قیدیوں کے ساتھ غیر انسانی سلوک

آج کی بات:   ایک تحقیقی ادارے نے رپورٹ شائع کی ہے کہ افغانستان کے جیلوں میں قدیوں کے ساتھ غیرانسانی سلوک کیا جا رہا ہے۔ رپورٹ کے مطابق حالیہ مہینوں میں قیدیوں کے ساتھ غیرانسانی سلوک کا سلسلہ عروج پر پہنچ گیا ہے۔ قیدی اپنے جائز حقوق سے بھی محروم ہیں۔ اس ادارے نے بطور مثال پل چرخی، میدان ...

مزید پڑھیں »

ٹرمپ کی پالیسی اور ایک ہزار فوجی؟

آج کی بات:   جرمنی کے شہر برسلز میں میں نیٹو کے وزرائے دفاع کا تین روزہ اجلاس ختم ہوگیا ہے۔ اجلاس کا اہم موضوع افغانستان اور ایشیا کے لیے امریکی صدر ٹرمپ کی نئی جنگی حکمت عملی پر غور کرنا یا دوسرے لفظوں میں افغانستان میں ٹرمپ کی حکمت عملی کی روشنی میں جنگ کو دوام بخشنا تھا۔ اجلاس ...

مزید پڑھیں »

عوام کے قاتلوں کا خیر مقدم

آج کی بات:   نیٹو میں شامل رکن ممالک کے وزرائے دفاع کے آخری اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ افغانستان میں مزید 3 ہزار فوجی تعینات کیے جائیں گے۔ اجلاس سے نیٹو کے سیکرٹری جنرل Stoltenberg نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ان تین ہزار فوجیوں کی تعیناتی سے جنگ کے میدان میں افغان فورسز کو حوصلہ ملے ...

مزید پڑھیں »

ٹیکساس کے ہلاک شدہ قندوز شہداء سے زیادہ قیمتی ہیں؟

آج کی بات؛ گزشتہ دنوں امریکا کے ایک چرچ میں مسلح شخص نے فائرنگ کر کے متعدد امریکیوں کو ہلاک اور زخمی کر دیا۔ اس واقعے سے دو روز قبل امریکی طیاروں نے افغانستان کے صوبہ قندوز کے ضلع چہاردرہ کے تین دیہاتوں ”سید عظم، غرو قشلاق اور سر آسیاب” پر بمباری کر کے انہیں صفحہ ہستی سے مٹا دیا، ...

مزید پڑھیں »

آخرکار دشمن ہی مغلوب ہوگا!

آج کی بات:   امریکا کی قیادت میں استعماری قوتوں نے افغانستان پر حملہ کر کے قبضہ جمایا اور ملک کو کشت و خون میں نہلا دیا۔ ہر حملے میں سیکڑوں نہتے شہری شہید اور زخمی ہوتے ہیں۔ بڑے اور چھوٹے دیہات تباہ ہو گئے۔ باغات و جنگلات کو بھاری بمباری سے آگ لگا دی گئی۔ انسانی حقوق کی تنظیموں ...

مزید پڑھیں »

دوسروں کے سیاسی فتوی پر کٹھ پتلیوں کا اظہار خوشی

آج کی بات: کابل کی کٹھ پتلی حکومت نے گزشتہ روز اُس نام نہاد اور علمی بنیاد سے عاری فتوے پر نہایت خوشی کا اظہار کیا، جو سعودی عرب کے ایک سرکاری مولوی کے ذریعے جاری کروایا گیا تھا۔ اُس میں کہا گیا تھا کہ ’جہاد کا فتوی صرف ریاست کا کام ہے۔ عام لوگ جہاد کا فتوی جاری نہیں ...

مزید پڑھیں »

اقوام متحدہ سے کٹھ پتلی حکومت کا نامعقول مطالبہ

آج کی بات: ایک سال قبل انہی دنوں 5 نومبر 2016 کو اقوام متحدہ کا ایک وفد افغانستان کے دورے پر آیا تھا، جس نے کابل میں کٹھ پتلی حکومت کے آدھے حصے کے سربراہ اشرف غنی سے ملاقات کی تھی۔ اشرف غنی نے وفد سے مطالبہ کیا کہ طالبان (مجاہدین) رہنماؤں، خاص طور پر امارت اسلامیہ کے امیر شیخ ...

مزید پڑھیں »

امریکا اپنی ہلاکتیں کیوں چھپاتا ہے؟

آج کی بات: افغانستان اور عراق میں امریکا کو جو جانی اور مالی نقصان ہوتا ہے، وہ خود اس کا اعتراف کرتا ہے اور نہ ہی میڈیا کو یہ حقائق اصل صورت میں شائع کرنے دیے جاتے ہیں۔ باوثوق ذرائع کے مطابق عراق میں دس سال کے دوران اوسطا ہر روز 15 سے 20 امریکی فوجی مارے جاتے تھے۔ اسی ...

مزید پڑھیں »

امریکی خوشی کے لیے افغان عوام کا قتلِ عام

آج کی بات:   امریکی جارحیت پسندوں کا نمائندہ ’ریکس ٹیلرسن‘ خفیہ طور پر کابل آیا اور بگرام ایئر بیس پر اپنے دو مشہور کٹھ پتلی پٹھوؤں اشرف غنی اور عبداللہ عبداللہ (جن کو اراکینِ پارلیمنٹ عذابِ الہی قرار دیتے ہیں) کو طلب کیا اور ایک بار پھر ان کے ساتھ پرانی باتوں کا اعادہ کیا۔ بگرام کے خفیہ غاروں ...

مزید پڑھیں »

پروپیگنڈا؛ دشمن کی کمزوری اور بوکھلاہٹ ہے

آج کی بات: بہادر مجاہدین کے حالیہ حملوں نے جارحیت پسندوں اور ان کی کٹھ پتلیوں کو بوکھلاہٹ سے دوچار کر رکھا ہے۔ دشمن اپنی ناکامیوں اور نقصانات کو چھپانے کے لیے مختلف ہتھکنڈے استعمال کر رہا ہے۔وہ اپنی  بوکھلاہٹ چھپانے کی کوشش میں ہے۔ لیکن ایوان صدر سے لے کر حکومت نواز میڈیا تک سب اس کوشش میں ناکام ...

مزید پڑھیں »