کالم وتجزیہ

دشمن کے دو ہزار حملے اور مجاہدین کی استقامت

آج کی بات:   اگست 2017 میں قابض استعمار نے افغانستان کے لیے نئی حکمت عملی کا اعلان کیا، جس کے بعد حملہ آوروں کے فضائی حملوں میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے۔ ان حملوں میں زیادہ تر عام لوگوں کو نقصان پہنچا ہے۔ متعدد گھر، مساجد، مدارس اور اسکول تباہ کر دیے گئے اور شہریوں کو بھاری جانی نقصان ...

مزید پڑھیں »

مشیر اور ترجمان میں جھوٹا کون؟

آج کی بات:   ترکی میں خفیہ امن مذاکرات کا انعقاد کیا گیا تھا۔ میڈیا نے تیسری بار ایسا مذاکراتی عمل بے نقاب کیا ہے۔ اب سوشل میڈیا پر لوگ نام نہاد مذاکرات کا مذاق اڑا رہے ہیں۔ ابھی تک ایوان صدر اور حکام اس حوالے سے ایک پیج پر نہیں ہیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ’حزب اسلامی‘ کی ثالثی ...

مزید پڑھیں »

امن کے جھوٹے دعوے دار

آج کی بات:   گزشتہ روز میڈیا نے رپورٹ شائع کی کہ ترکی میں امارت اسلامیہ کے نمائندوں نے امن مذاکرات میں شرکت کی ہے، جس پر امارت اسلامیہ کے ترجمان نے فوری ردعمل دیتے ہوئے اعلامیہ جاری کیا کہ ’ہمارا کوئی وفد ترکی گیا ہے اور نہ ہی مذاکراتی اجلاس کے شرکاء امارت اسلامیہ کی نمائندگی کر سکتے ہیں!‘ ...

مزید پڑھیں »

مجاہدین امریکی فوج کے انتظار میں ہیں

آج کی بات:   امریکی حکام نے اعلان کیا ہے کہ اگلے چند دنوں میں مزید 700 فوجیوں کو افغانستان میں تعینات کیا جائے گا۔ مزید قابض افواج کو یہاں تعینات کرنے کا اعلان ایک ایسے وقت کیا گیا ہے کہ گزشتہ روز مشرقی صوبے ننگرہار میں کٹھ پتلی فوج میں سرایت کرنے والے رابطہ کار بہادر مجاہدین نے امریکی ...

مزید پڑھیں »

ٹرمپ کی جنگی حکمت عملی کی شکست

آج کی بات:   افغانستان سے متعلق امریکی صدر ٹرمپ کی جنگی حکمت عملی کے اعلان کے بعد مختلف علاقوں میں دشمن نے نئی کارروائیوں کا آغاز کیا ہے۔ آپریشن کا بڑا حصہ فضائی حملوں، رات کے چھاپوں، ڈرون حملوں اور بڑے ہتھیاروں کے استعمال کے لیے مختص کیا گیا ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ مذکورہ نئی کارروائیوں کے متاثرین ...

مزید پڑھیں »

دولت وزیری نے داعش کو بری الذمہ کیوں قرار دیا ؟

آج کی بات:   کابل کی کٹھ پتلی انتظامیہ امریکی جارحیت پسندوں کے ریموٹ پر چلتی ہے۔ وہ اب ایک اور کام مجبور کی گئی ہے۔ اگر وہ ایسا نہیں کر پائی تو اس کی تنخواہیں بند اور اسے امریکی غلامی کے اعزاز سے نکال دیا جائے گا۔ تب نہ تنخواہ ملے گی اور نہ ہی کابل کی مضبوط ٹھکانوں ...

مزید پڑھیں »

انسانی اقدار کے محافظ کون؟

آج کی بات:   گزشتہ دنوں قابض امریکی اور کٹھ پتلی فورسز نے صوبہ ہلمند کے ضلع نوزاد کے بازار اور ایک دینی مدرسے پر چھاپے کے دوران متعدد طالب علموں کو شہید اور زخمی کر دیا۔ اسی طرح متعدد دکانوں کو لوٹا گیا۔ رپورٹس کے مطابق ظالم اور سفاک دشمن نے علاقوں کو دس گھنٹے تک گھیرے میں لیے ...

مزید پڑھیں »

ماہنامہ شریعت کا نیا شمارہ منظر عام پر

شمارہ نمبر 70   سنگلاخ پہاڑوں میں گھِرے ہوے افغانستان نے ہمیشہ دنیا بھر سے الگ تھلگ اپنی شناخت برقرار رکھی ہے۔ کسی بھی خطے کے باشندوں کی جسمانی ہیئت اور عادات و اطوار میں وہاں کی مٹی اور جغرافیے کا بہت دخل ہوتا ہے۔نرم و نازک مٹی پر بسیرا کرنے والے رہائشیوں میں اکثر سُستی و کاہلی اور غیرمحنتی ...

مزید پڑھیں »

کٹھ پتلی حکومت کے ٹینکوں پر داعش کے جھنڈے

آج کی بات:   سوشل میڈیا پر بڑے پیمانے پر ایسی تصاویر شائع ہوئی ہیں، جن سے واضح ہوتا ہے کہ کابل حکومت کے ٹینکوں پر داعش کے جھنڈے لہرائے گئے ہیں۔ عوامی حلقوں نے کئی بار اس بات کی نشان دہی کی ہے کہ ”امریکا اور کابل حکام داعش کی مدد کرتے ہیں۔ مجاہدین اور داعش کے درمیان جنگ ...

مزید پڑھیں »

فتوحات سے نئے سال کا آغاز

آج کی بات:   نئے سال 2018 کا آغاز جہادی فتوحات سے ہوا ہے۔ افغانستان میں عام طور پر موسم سرما میں جنگ کی شدت میں کمی آجاتی ہے۔ البتہ اس بار قابض اور کٹھ پتلی فورسز نے افغانستان کے مختلف علاقوں میں مظلوم افغان عوام کے خلاف زمینی اور فضائی کارروائیاں شروع کر رکھی ہیں۔ جب کہ دشمن کو ...

مزید پڑھیں »