قندہار حادثہ کے متعلق اینٹلی جنس جعلی رپورٹ پر ترجمان کا ردعمل

جمعرات کےروز ۱۵/ جون ۲۰۱۷ء کابل انتظامیہ کی اینٹلی جنس سروس نے  ایک رپورٹ میڈیا کے حوالے کردی ، جس میں دعوہ کیا گیا کہ قندہار شہر میں ہونے والے اس دھماکہ میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین ملوث ہے، جس میں متحدہ عرب امارات کے چند سفارت کار قتل ہوئے تھے۔

رپورٹ نہایت وقاحت اور بےشرمی کیساتھ جعلی طور پر مرتب شدہ ہے،ایک شخص جس کو انہیں گورنر ہاؤس کا خانساماں کہتے ہیں، دعوہ کررہا ہے کہ یہ حادثہ امارت اسلامیہ کے مجاہدین کی جانب سے  انجام ہوا ہے اور اینٹلی جنس حکام کی جانب سے تعین شدہ جملے بول رہا ہے۔ اسی طرح بعض فون مکالمے بھی جعلی طور مرتب کیے جاچکے ہیں اور دشمن چاہتا ہے کہ اس نوعیت  دھوکہ سے  امارت اسلامیہ کے مجاہدین کو  اس حادثہ سے  جوڑ دیں۔

ہم ایک بار پھر مذکورہ حادثہ میں امارت اسلامیہ کےملوث ہونے کی پرزور تردید کرتے ہیں۔ دشمن کوشش کرتی ہے کہ باہمی اختلافات اور رنجشوں سے توجہ کسی اور جانب مبذول کروادیں اور مجاہدین کے خلاف پروپیگنڈے کے اسباب فراہم کریں۔

سب کو معلوم ہے کہ اس حساس مقام پر اتنی پیچیدہ حملے بذات خود دشمن کے بعض برسراقتدار عناصر کا عمل ہے، جو چند افراد کے خاتمہ کے لیے انجام دیتے ہیں۔

قاری محمد یوسف احمدی ترجمان امارت اسلامیہ

۲۱/ رمضان المبارک ۱۴۳۸  ھ   بمطابق  ۱۶ / جون ۲۰۱۷ ء

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*