کابل و ننگرہار حملے و دھماکے، کمانڈر سمیت 18 ہلاک و زخمی

پولیس اہلکاروں اور کٹھ پتلی فوجوں پر امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے کابل اور ننگرہار صوبوں میں حملہ کیا۔

اطلاعات کے مطابق سنیچر کےروز شام کے وقت صوبہ ننگرہار کے صدر مقام جلال آباد شہر کے قریب بیس اکمالاتی کے علاقے میں پولیس کمانڈر کی گاڑی میں مجاہدین کی نصب کردہ مقناطیسی بم سے دھماکہ ہوا، جس سے کمانڈر انور سمیت تین اہلکار ہلاک ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق سنیچر کےروز دوپہر کے وقت صوبہ کابل ضلع سروبی کے ماہپیر کے علاقے ولوناو کے مقام کابل، جلال آباد قومی شاہراہ پر مجاہدین نے پولیس کاروان اور چوکی پر ہلکے و بھاری ہتھیاروں سے وسیع حملہ کیا، جو ایک گھنٹے تک جاری رہا، جس کے نتیجے میں دو رینجر گاڑیاں تباہ ہونے کے علاوہ پانچ پولیس اہلکار  بھی ہلاک و زخمی ہوئے۔

دوسری جانب سنیچر کےروز شام کے وقت مجاہدین نے مذکورہ شاہراہ کے سورتنگی کے علاقے میں کٹھ پتلی فوجوں پر حملہ کیا، جس کے نتیجے میں دس اہلکار ہلاک و زخمی ہوئے۔

الحمدللہ مجاہدین کا کسی قسم کا نقصان نہیں ہوا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*