07/ اکتوبر: امریکی جارحیت کے آغاز کے متعلق امارت اسلامیہ کا اعلامیہ

آج سے سولہ برس سے قبل 15/ میزان 1380 ھش بمطابق 07/ اکتوبر 2001ء امریکی غاصب فوجوں نے افغان حریم، فضا اور سرزمین پر جارحیت کی اور افغان عوام کی قتل عام کی بدبینی پر مبنی لڑائی شروع ہوئی۔

جنگ کی اصل وجہ امریکی متکبرانہ سیاست اور دیگر ممالک پر قبضہ اور انہیں غلام بنانے کی وہ پالیسی تھی، جس میں عقلی اور منطقی فیصلے کی کوئی گنجائش نہ تھی اوراس کے نتیجے میں ایسی آگ بھڑکا دی،جس کے شعلوں میں آج تک امریکہ جل رہا ہے۔

وقت کے امریکی حکمرانوں نے اپنے ناتجربہ جنرلوں اور سیاستدانوں کے مطابق سوچا تھا کہ افغانستان ایک لقمہ ہوگی اور اس تک پہنچتے ہی اسے ہڑپ کردی جائیگی اور اسے اپنی کالونیوں کے صف میں لاکھڑے کریگی۔مگر امریکہ کو معلوم نہ تھا کہ افغان غیور عوام نے ہر جارح طاقت کی گردن توڑ کر اسے تاریخ کے گڑھے میں پھینک دی ہے۔

گزشتہ سولہ برسوں کے دوران امریکی غاصبوں نے ایک لاکھ سے زائد افغانوں کو شہید اور زخمی ، لاکھوں کو گھربار چھوڑنے پر مجبور ، عقوبت خانوں میں پابندسلاسل کرتے ہوئے  ان پر بےتحاشا مظالم ڈھائے ہیں، مگر وہ کچھ جو سولہ برس کے بعد ثابت ہورہا ہے، وہ افغان غیور اور مسلمان عوام کی جارحیت کے خلاف پختہ عزم، ناقابل شکست ارادہ  اور اللہ تعالی کی راہ میں ثابت قدمی اور استقامت ہے،جس کی رو سے امارت اسلامیہ کی قیادت میں متانت کیساتھ جہادی جدوجہد آگے بڑھ رہی ہے اور اور خستگی کا احساس نظر نہیں آرہا ہے۔

اس مدت کے دوران ہر سال امریکہ کے خلاف افغان جہاد میں تیزی آتی رہی ، صفوف منظم، دشمن کو شدید نقصانات پہنچائے گئے، نوجوانوں نے تربیت پاکر جہادی صف کو منظم کیا ہے اور اس وقت  الحمدللہ ملک کے نصف سے زیادہ رقبے کو جارحیت کی منحوس موجودگی سے پاک کردی گئی ہے۔

افغان مجاہد عوام کے نمائندہ کے طور پر امارت اسلامیہ امریکی غاصبوں کو بتاتے ہیں کہ جنگ جنتی طول پکڑتی ہے،آخرکار شکست اور فرار تمہارا مقدر ہی ہوگا، افغان عوام خستہ ، مایوس ہوچکی ہے اور نہ ہی اپنی جدوجہد سے دستبردار ہوگی، ہم جنگ کے میدان میں بلند حوصلے، شہادت کے جذبے اور اللہ تعالی کی راہ میں عظیم جہادی فریضے کو انجام دینے کی نیت سے کھود پڑے ہیں، تمہیں سمجھنا چاہیے کہ ایسے عقیدے پر مبنی  اور پختہ ملت کو کسی نے تسخیر  کیا ہے اور نہ ہی انکا  خواب شرمندہ تعبیر ہوا ہے۔

بہترین راستہ یہ  ہے کہ امریکی غاصب مزید حقائق درک کریں، دیگر اقوام کی آزادی کا احترام کریں، مزید اپنی نقصانات اور انسانی خسارات کا روک تھام کریں، اپنی تاریخ کے سب سے بڑی جنگ کو مزید طول نہ دیں، بلکہ طاقت کے بجائے عقل اور منطق سے کام لے، اپنی غاصب افواج کو ہمارے ملک سے نکال لے،افغانوں اور ان کے رادوں کو  رہنے دو، ہمارے امور میں مداخلت سے دستبردار ہوجاؤ اور  سرکشی کے دوام سے اپنے آپ کو تباہی کے گڑھے میں مت پھینکو۔

ہم نے امریکی افواج کو ماربھگانے کا عزم کر رکھا ہے، یہ ہمارا مسلم حق ہے، ہم اپنی آزادی، خوداردیت، اسلامی نظام اور عوام سے سر کے بدلے دفاع کرینگے اور اس راہ میں ہمارے ہزاروں نوجوان قربانی اور شہادت کی امید سے منتظر ہیں  اور ضروری اسلامی نظام قائم کریگا۔ ان شاءاللہ

امارت اسلامیہ افغانستان

17/ محرم الحرام 1439 ھ ق

15/ میزان 1396 ھ ش

07 / اکتوبر  2017 ء

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*