امریکہ کی جانب سے بیت المقدس اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے  کے متعلق امارت اسلامیہ کا  ردعمل

آخرکار امریکہ نے اپنی جارحیت پسند چہرے کو مزید عیاں کرکے دین اسلام سے دشمنی اور مسلمانوں کے علاقوں کو غصب اور استعمار سے حمایت کی پالیسی کو اعلان کردی۔

امارت اسلامیہ امریکی صدر کی جانب سے مسلمانوں کے قبلہ اول بیت المقدس کو غاصب اسرائیلی دارالحکومت تسلیم  کی پرزور الفاظ میں مذمت کرتی ہے  اور اس اقدام کو تمام مسلمانوں کے خلاف تعصب پر مبنی اور عقل سے بعید سے سمجھتی ہے۔

ٹرمپ کا یہ فیصلہ دنیا بھر میں خاص کر مشرق وسطی میں تنازعات کو ابھارنے کی کوشش ہے۔

امریکی صدر ٹرمپ نے ظاہر کردی کہ مسلمانوں کے ان تمام مصائب میں امریکی براہ راست ملوث ہیں، جو عشروں سے مسلمانوں کو تکلیف پہنچا رہا ہے، ان کے ممالک پر قبضہ ، عوام کا قتل عام کررہا ہے اور دین اسلام کے اقدار کو ختم کرنے کی جدوجہد کررہی ہے۔

امارت اسلامیہ تمام مسلم ممالک اور مسلمان اقوام کو بتاتی ہے کہ بیت المقدس سے اپنے حمایت کا اعلان کریں  اور فلسطین کے مظلوم عوام کی جائز جدوجہد کا حمایت کریں۔

اگر عالم اسلام ایک دوسرے کو بھائی چارے کا ہاتھ نہ بڑھائے اور متحد طور پر اپنے مسائل کے حل کے لیے کمربستہ نہ ہوجائے، اسلام دشمن سازشوں کو نہ سمجھے اور مواقع مزید تر گنوا تے رہے، تو بہت جلد غاصب طاقتوں کی جانب سے مسلمانوں کے اقدار بھی نیست و نابود ہوجائیگا اور مسلمانوں کی موجود گی عظیم خطرے   سے روبرو ہوگی۔

امارت اسلامیہ افغانستان

19/ ربیع الاول 1439 ھ بمطابق 07 / دسمبر 2017 ء

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*