06/جدی سوویت یونین کی جارحیت 38ویں برسی کے متعلق امارت اسلامیہ کا اعلامیہ

اڑتیس  برس قبل 06/جدی 1358ھش بمطابق 27/ دسمبر 1979 ء   کو بیسویں صدی میں افغانستان کو ایک بار پھر امتحان کا سامنا ہوا اور وقت کے سوویت یونین کمیونسٹ بلاک کی جانب سے عریاں جارحیت ہوئی۔

اس دن نے افغانستان کی تاریخ میں جارحیتوں کے تخت و تاج کے سلسلے میں ایسی منحوس تاثرات چھوڑیں، جنہیں افغان مظلوم اور نہتے عوام تاحال جھیل رہے ہیں اور بعد میں پیش آنے والے مصائب کے تسلسل کے سبب بنے۔

سوویت یونین اپنا کمیونزم نظریہ اور منحوس ایڈیالوجی کو دنیا پر لاگو کرنا چاہتا ،اس بار افغانستان کو اپنا ہدف بنایا اور یہاں اپنے اینٹلی جنس عناصر اور مزدورں کے بل بوتے پر افغان مسلمان عوام کی آرام زندگی  کو مصائب، شہادتوں، ہجرتوں اور المیوں سے بدل ڈالی۔

مگر الحمدللہ ایک عشرہ گزرنے سے افغان غیور عوام نے اپنی ایمانی غیرت اور افغانی غرور کی طاقت پر اس  قادر ہوئے کہ اس منحوس بلاک کو تاریخ کے گڑھے میں دھکیل دیں، اپنی شہادتوں، مصائب اور تکالیف کا انتقام ان سے اس شکل میں لے، کہ اب دنیا میں کوئی بھی سوویت یونین کے نام سے کسی جہت پہچانے اور نہ ہی اس کا نام لے۔

افغانوں کی جہاد اور جدوجہد کے سلسلے میں نہ صرف یہ کہ افغانستان  نے سرخ ریچھ کے چنگل سے نجات پایا، بلکہ نصف دنیا کو بھی کمیونزم کی شر سے چھٹکارا ملا  اور اس نے سکھ کا سانس لیا۔

لیکن بدقسمتی سے عالمی استعمار نے افغانستان میں سوویت یونین کی شکست کوئی عبرت حاصل نہیں کی، بلکہ نظریے کی تھوڑی تبدیلی اور  نئے اسلحہ کے ہمراہ پھر افغانستان کو اکیسویں صدی کے آغاز میں اپنی جارحیت اور زیر قبضہ لایا۔

جب امریکہ کو بیسویں صدی کی آخر میں سابق یوگوسلاویہ کی جارحیت کے بعد کسی سے دندان شکن جواب نہ مل سکا اور سوویت یونین کی شکست سے عبرت حاصل نہ کرنے سے افغانستان پر اسی نوعیت جارحیت کی۔

مگر الحمدللہ افغان بہادر اور غیور عوام وہی سابقہ ملت ہے،اسی ایمان اور غرور سے مزین ہے،  اسی لیے سوویت یونین کے مقابلے میں جہادی تجربات سے فائدہ اٹھاکرامریکی جارحیت کے خلاف کمربستہ ہوئے  اور اب امریکہ بھی سابق سوویت یونین کی طرح شکست اور رسوائی سے روبرو ہے، امریکی فوجیں مارے جاتےہیں،  اس کی معاشی حالت تباہ اور عالمی حیثیت اور علمبرداری ختم ہوئی۔

امارت اسلامیہ سوویت یونین کی جارحیت  کے اس سیاہ دن کو بعد میں  افغانستان میں پیش آنے والے تمام مصائب کی  جڑ سمجھتا ہے اور استعمار کی خدمت میں مصروف افغانما مہروں کو بتاتی ہے کہ افغانستان میں اسلام ضد اور اجنبی نظریات برآمد  کرنے سے گریز کریں، استعمار کے معاون و مددگار مت رہے، استعمار کے زیر سایہ اپنے بھائیوں کو نیست ونابود نہ کریں،  کمیونزم کی شکست اور شرمندہ حالت سے عبرت حاصل کریں اور مزید اپنی عوام اور دین سے عظیم ملی غداری اور جفا سے دستبردار ہوجائے۔

امارت اسلامیہ افغانستان

09/ ربیع الثانی 1439 ھق

06/ جدی 1396 ھش

27/ دسمبر 2017 ء

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*