بے وقوفی کی حد

آج کی بات

 

کابل میں ہوٹل پر کامیاب حملے میں درجنوں غیرملکی ہلاک ہوئے تھے۔ امریکا نے اس حملے میں اپنے شہریوں کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔ میڈیا نے خبر دی کہ امریکا چاہتا ہے افغانستان میں مزید ایک ہزار فوجی تعینات کیے جائیں گے۔

ایک عرصے سے میڈیا پر ایسی خبریں زور و شور سے گردش کر رہی ہیں کہ ’ٹرمپ کی نئی حکمت عملی کے بعد افغانستان میں مزید امریکی فوجیوں کو تعینات کیا جائے گا۔

ٹرمپ انتظامیہ نے اگرچہ نئی حکمت عملی کا اعلان کیا ہے اور اس کو کامیاب قرار دیا ہے، لیکن اب تک وہ افغانستان سے متعلق پریشان کن صورت حال سے دوچار ہیں۔ وہ سمجھنے سے قاصر ہیں کہ گزشتہ 17 سالوں میں انہوں نے جو کچھ کرنا تھا۔ کر دیا۔ نہتے شہریوں پر ہر قسم کے مظالم ڈھائے گئے۔ کٹھ پتلی حکمرانوں نے بھی ان کا خیرمقدم کیا۔

حتی کہ حال ہی میں ٹرمپ کی نئی حکمت عملی کے تحت افغانستان میں تعینات امریکی فوجیوں کو تمام اختیارات دیے گئے ۔ اس سلسلے میں نئی پالیسی کے تحت انہوں نے چھ ماہ کے دوران مظلوم اور نہتے افغانوں پر ہزاروں بم گرائے۔ ان تمام تر کوششوں کے باوجود حملہ آوروں اور کٹھ پتلی فورسز کو مجاہدین کے خلاف کامیابی نہیں ملی۔ مجاہدین کے حوصلے پست ہوئے اور نہ ہی انہیں اپنے زیرکنٹرول علاقوں سے بے دخل کیا جا سکا۔ ظاہر ہے ایسی مایوس کُن حالت امریکی فوجیوں کے لیے واضح شکست کا پیغام ہے۔ وہ مجاہدین کو شکست دینے کی صلاحیت نہیں رکھتے۔ انہوں نے ہر حربہ اور طاقت کا بے دریغ استعمال کیا ہے۔ وہ ناکام رہے۔ وہ اب کم از کم یہ کوشش ضرور کریں گے کہ افغانستان میں جنگ کو دوام بخشنے کے لیے کٹھ پتلی فورسز کی حوصلہ افزائی کی جائے، تاکہ وہ جنگ سے دست بردار نہ ہوجائیں۔ اگرچہ وہ اس جنگ کی بھاری قیمت ادا کر رہے ہیں۔

یہی وجہ ہے مزید فوجیوں کو تعینات کرنے کا فیصلہ اب تک صرف میڈیا تک محدود ہے۔ وہ حقیقت جانتے ہیں کہ ڈیڑھ لاکھ سپاہیوں کے ساتھ انہوں نے کامیابی حاصل نہیں کی تو چند سو یا چند ہزار فوجیوں کو تعینات کرنے سے وہ کس طرح کامیابی حاصل کر سکتے ہیں۔ میڈیا کے ذریعے ایسے ڈرامے رچانے کا مقصد صرف اپنی تاریخی اور ذلت آمیز شکست پر پردہ ڈالنے کی ناکام کوشش ہے۔ اپنے زرخرید اور بے ضمیر اہل کاروں کو حوصلہ دینے کے لیے انہیں خراج تحسین پیش کرتے ہیں، تاکہ وہ استعماری قوتوں کے گھناؤنے ارادوں اور عزائم کو پایہ تکمیل تک پہنچائیں۔ اتنی واضح اور ذلت آمیز شکست کے باوجود مزید فوجی بھیجنے کا اعلان مضحکہ خیز اقدام اور حماقت ہے۔ شکست جارحیت پسندوں اور کٹھ پتلی حکومت کا مقدر ہے۔ ان شاء اللہ

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*