افغانستان میں ٹاپی پروجیکٹ کے افتتاح کے حوالے سے امارت اسلامیہ کا اعلامیہ

ٹاپی پروجیکٹ (TAPI) علاقائی سطح پر اہم معاشی منصوبہ ہے اور اس کی تعمیر کا پہل امارت اسلامیہ کے دوراقتدار میں  ہوا،  ان اہم صنعتی اور معاشی منصوبوں میں سے ہے، جس کی تکمیل افغانستان پر امریکی جارحیت کی وجہ سے تاحال مؤخر رہا ۔

یہ کہ ایک طرف مذکورہ منصوبے کے تعمیر کا امتیاز امارت اسلامیہ کو حاصل ہے اور اس بارے میں امارت اسلامیہ اور ٹاپی پروجیکٹ کے مربوطہ جہتوں کے درمیان اسناد اور توافقات تاحال موجود ہیں اور دوسری جانب پروجیکٹ کے تطبیق کے کثیر رقبے پر امارت اسلامیہ کا کنٹرول ہے، تو امارت اسلامیہ اپنے مؤقف کو درج ذیل اعلان کرتی ہے :

  • : امارت اسلامیہ ٹاپی پروجیکٹ کو معاشی ڈھانچے کی اہم عنصر تصور کرتی ہے اور اصولی طور پر اسے عملی کرنا افغانوں کے لیے اہم خوشخبری سمجھتی ہے۔
  • : امارت اسلامیہ اپنے زیر کنٹرول علاقوں میں منصوبے کے عملی کرنے کی خاطر اپنا تعاون اعلان کرتی ہے اور ٹاپی پروجیکٹ کے مربوطہ پہلوکو  امارت اسلامیہ کے اصولی مؤقف کی رعایت  کے لیے متوجہ کرتی ہے۔
  • :یہ کہ کابل کرپٹ انتظامیہ کرپشن اورغبن میں عالمی ریکارڈ کی حامل ہے اور اس کے دوراقتدار میں اب تک کوئی اہم منصوبہ بھی مالی کرپشن، غبن اور لوٹ مار کے علاوہ انجام نہیں ہوا، تو اس منصوبے میں بھی وسیع تر کرپشن کریگی،اسی وجہ سے اگر امارت اسلامیہ کو ٹاپی پروجیکٹ کے تطبیق کے دوران ایسی چیز ثابت ہوجائے،جس میں کابل انتظامیہ کے حکام کی کرپشن اور غبن ظاہر اور عوام کا حق ضائع ہوجائے، تو امارت اسلامیہ اس کرپشن کی سدباب کریگی اور سٹیک ہولڈر سے بھی گزارش ہے کہ اس جانب فی الفور توجہ دیں، تاکہ یہ اہم منصوبہ تاخیر اور رکاوٹ سے روبرو نہ ہوجائے …
  • : یہ کہ ٹاپی پروجیکٹ خالص معاشی اور صنعتی منصوبہ ہے اور اور امریکی غاصبوں کو اس میں معاشی یا فوجی  دلچسپی میسر نہیں، تو ممکن امریکی اپنی مذموم مقاصد کی رو سے اس پروجیکٹ کے خلاف ایسی غیرمستقیم مزاحمت سامنے لائے،جس طرح مس عینک منصوبے کے خلاف ایجاد کیا اور اس منصوبے  کے استخراج کی قرارداد 2008ء کو چینی کمپنی ایم سی سی (MCC) کیساتھ  ہوا، لیکن عملی کام تاحال تاخیر کا شکار ہے۔ مس عینک منصوبے کے بعد ٹاپی دوسرا ایسا اہم تعمیراتی منصوبہ ہے،جو درحقیقت افغانوں کی معاشی ترقی میں اہم کردار ادا کرتی ہے  اور امریکہ کسی طور پر بھی اس منصوبے اور پروگرام کو برداشت نہیں کرسکےگا،جو افغانوں کے مفاد میں ہو، لہذا امارت اسلامیہ کابل انتطامیہ کے علاوہ ٹاپی پروجیکٹ کے دیگر مربوطہ پہلوؤں کو تجویزپیش کرتی ہے  کہ منصوبے کے افتتاح سے قبل اقوام متحدہ  اور یا کسی اور بااثر تنظیم کے ذریعے امریکیوں سے مذکورہ منصوبے کی عدم تخریب اور حفاظت کا ضمانت لے، ورنہ عنقریب مس عینک اہم منصوبے کی طرح ٹاپی بھی امریکی مزاحمت کی وجہ سے رکاوٹ سے روبرو ہوجائیگی۔
  • : امارت اسلامیہ ملک کی تعمیرنو اور اس میں معاشی ڈھانچوں کی بحالی کو اپنی ذمہ داری سمجھتی ہے اور عالمی عمرانی کمپنیوں سے مطالبہ کرتی ہے کہ اس مد میں افغانوں کے ہاتھ تام لو ۔ امارت اسلامیہ کسی قسم کے امداد سے دریغ نہیں کریگی۔

والسلام

امارت اسلامیہ افغانستان

07/ جمادی الثانی 1439 ھ بمطابق   23/ فروری  2018 ء

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*