تازہ فتوحات اور پریشان دشمن

آج کی بات

 

منصوری آپریشن کے سلسلے میں مجاہدین نے افغانستان بھر میں دشمن کے خلاف کامیاب کارروائیوں میں تیزی لائی ہے۔ کئی علاقے فتح کیے گئے اور دشمن کو بھاری جانی و مالی نقصان پہنچا ہے۔ مظلوم شہریوں کو پُرامن فضا مہیا ہوئی ہے۔ بہادر مجاہدین کے حملوں نے بزدل دشمن کو بوکھلا دیا ہے، جس کی چیخ و پکار دنیا سن رہی ہے۔ تازہ ترین خبروں کے مطابق مجاہدین نے قندھار ایئربیس پر میزائل حملے سے دشمن کو شدید نقصان پہنچایا ہے۔ اسی طرح قابض فوج کا ایک ٹینک دھماکہ خیز مواد سے تباہ ہو گیا، جس میں سوار تمام اہل کار ہلاک ہوگئے۔

مجاہدین نے صوبہ زابل کے ضلع میزان کے علاقے ٹکیر میں فورسز کی چوکیوں پر حملہ کیا، جس کے نتیجے میں دشمن کے دو ٹینک تباہ اور ان میں سوار کٹھ پتلی فوجی ہلاک ہوئے۔ اسی طرح صوبہ ننگرہار کے ضلع خیوی کے علاقے بڈیالی کے ظالم اور درندہ صفت ضلعی پولیس سربراہ ’مطیع اللہ صافی‘اپنے محافظین سمیت مجاہدین کے حملے میں ہلاک ہوگیا۔ گزشتہ رات کابل انتظامیہ کے کمانڈوز نے قابض امریکی فوج کے تعاون سے صوبہ فراہ کے ضلع بالابلوک کے علاقے ’سیاہ جنگل‘ میں مجاہدین کے ٹھکانوں پر چھاپہ مارا، جوابی کارروائی میں دشمن کو بھاری نقصان کا سامنا کرنا پڑا۔ مجاہدین نے پہلے سے حکمت عملی کے تحت دشمن پر حملہ کر دیا، جس کے نتیجے میں 14 کمانڈو ہلاک ہوگئے۔ جن کی لاشیں میدان جنگ میں پڑی ہوئی ہیں۔ جب کہ سات کمانڈو زخمی ہیں۔ علاوہ ازیں مجاہدین نے بھاری مقدار میں اسلحہ بھی غنیمت میں حاصل کیا ہے۔

مجاہدین  نے صوبہ اروزگان کے ضلع خاص اروزگان کے علاقے ششپر اور چہارآسیا میں ایک کامیاب کارروائی کے دوران دشمن کے ایک بڑے فوجی اڈے سمیت چار چوکیاں فتح کر لیں۔ جب کہ اس کارروائی میں متعدد فوجی اور پولیس اہل کار ہلاک اور زخمی ہوئے۔ مجاہدین نے مفتوحہ علاقے میں بڑی تعداد میں ہتھیار، گولہ بارود اور دیگر فوجی سازوسامان بھی غنیمت میں حاصل کیا ہے۔ علاوہ ازیں مجاہدین نے اسی ضلع کی دفاعی لائن پر حملہ کر کے 2 چوکیاں فتح، جب کہ 20 سے زائد کٹھ پتلی فوجی ہلاک اور زخمی کر دیے۔

مجاہدین اپنے حملوں میں مزید شدت لائیں گے۔ مقبوضہ علاقوں کو حملہ آوروں کے قبضے سے آزاد کرائیں گے۔ دنیا پر ثابت کیا جائے گا کہ مجاہدین اس دھرتی کے بیٹے ہیں۔ وہ افغان مسلم قوم کی حمایت سے ناجائز قبضے اور کرپشن کے خلاف جہاد کر رہے ہیں۔ مجاہدین اللہ تعالی کی مدد اور عوام کی حمایت سے جہاد جاری رکھیں گے۔ جب کہ فتح قریب ہے۔ قابض دشمن کا حشر بھی ماضی کے حملہ آوروں جیسا ہوگا۔ افغان قوم کی قربانیاں اسلامی نظام کے نفاذ کی شکل میں ضرور رنگ لائے گی۔ کٹھ پتلی حکمرانوں کا انجام کمیونسٹوں جیسا ہوگا۔ انہیں ایک دن ضرور عدالت کے کٹہرے میں حاضر کیا جائے گا۔ ان شاء اللہ

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*