قندوز المیے کے حوالے سے امارت اسلامیہ کا اعلامیہ

اتوار کے روز 02 / اپریل 2018 ء کو صوبہ قندوز ضلع دشت آرچی کے پھٹان کے علاقے میں امریکی ایماء اور کابل انتظامیہ کی سیکورٹی فورسز کے ذریعے اس عوامی اجتماع پر بمباری کی گئی، جس میں ایک مدرسے کے فارغ التحصیل طلبہ اور حفاظ کرام کی دستار فضیلت کی تقریب جاری تھی۔

اس دلخراش المیے میں 200 تک شہری  شہید و زخمی ہوئے،جن میں اکثریت علماء، حفاظ کرام اوربچوں کی تھی،جس سے افغان عوام کو شدید دھچکا لگا۔

اس خوفناک عمل نے ایک بار پھر ثابت کردیا کہ افغانستان پر مسلط استعمار اور اس کے دین سے  عاری داخلی غلام افغان عوام کے نظریے، اسلامی فکر، تعلیم، اقدار اور مقدسات سے کتنی دشمنی رکھتی ہے اور ان کی بیخ کنی کی کوشش کرتی ہے۔

امارت اسلامیہ ایک مرتبہ پھر اس عظیم جرم کی شدید الفاظ میں مذمت کرتی ہے  اور اس کے عاملین سے شدید  تر انتقام لینے کی وعدہ کرتی ہے۔

باالعموم افغان مجاہد عوام اور باالخصوص امارت اسلامیہ نے اسلام کی دفاع کی خاطر عظیم قربانیاں دی ہیں، اس کے بعد بھی افغان عوام کو تسلی دیتی ہے کہ تمہاری اور تمہارے دینی مقدسات کی تحفظ اور دفاع کی خاطر کسی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کریگی اور اس طرح ناقابل معافی جرائم کے عاملوں کو عدالت کے کٹہرے میں لاکھڑا کریں گے۔

قندوز کے عظیم بحران کے بعد افغان عوام پر لازم ہے کہ موجودہ جہاد کا ساتھ دیں، اپنے دین، مقدسات، دینی علماء اور مدارس کی نجات کے لیے مزید جدوجہد کریں اور  استعمار کی شکست کے لیے جہادی صفوف کو مزید تر طاقتور کریں۔

امارت اسلامیہ تمام عالمی غیرجانبدار تنظیموں، اداروں اور انسانی حقوق کی تنظیموں سے مطالبہ کرتی ہے کہ قندوز میں رونما ہونے والے جنایت کے بارے میں وسیع اور غیرجانبدار وفود کا انتخاب ، انہیں علاقے روانہ کیجیے، تاکہ المیہ کی آزادانہ اور ہمہ پہلو تحقیقات کریں اور یہ ظاہر کریں، کہ حملہ کس پر ہوا ہے اور کن مقاصد کے لیے کیا گیا ہے۔

امارت اسلامیہ ایسی وفود کی آمد کے لیے  انتظامات کریگی اور علاقے میں ہر قسم کی سیکورٹی کا یقین دلاتی ہے۔ اسی طرح امارت اسلامیہ تمام ذرائع ابلاغ، صحافی حضرات اور محقیقین سے بھی مطالبہ کرتی ہےکہ آزادانہ طور پر علاقے کا دورہ کریں، مذکورہ جگہ کو قریب سے دیکھ لے، عوام اور متاثرین کیساتھ گفتگو کریں اور المیہ کے متعلق مؤثق معلومات جمع کرکے عوام اور دنیا تک پہنچا دیں۔

نیز امارت اسلامیہ غیرجانبدار لکھاریوں، مبصرین اور متعہد تجزیہ نگاروں سے بھی مطالبہ کرتی ہے کہ قندوز المیہ پر خصوصی توجہ دیں،اس کے متعلق قلم اٹھائے ، اذہان کو روشن کریں، تفصیلات عوام تک پہنچا دیں اور اس نوعیت سانحات کے پیچھے استعماری افواج اور ان کے مزدوروں کی مقاصد اور مذموم منصوبوں کو افشا کرکے  اپنی ملت کو آگاہ رکھے۔

ہم قندوز المیہ میں تمام شہداء کے خاندانوں سے دل کی گہرائیوں سے ہمدردی کا اظہار کرتے ہیں، ان کے غم اور درد کو  اپنا ہی درد سمجھتے ہیں، شہداء کے لیے جنت الفردوس اور زخمیوں کے لیے فی الفور شفاء اور مصیبت زدہ خاندانوں کے لیے صبرجمیل اور اجزیل کی اپیل کرتے ہیں۔

رب متعال سے التجاء کرتے ہیں، کہ ان مقدس اور معصوم لہو کی برکت سے ہمارے ملک کو استعمار کی دام سے نکال دیں، اسلامی نطام کے اعادہ اور افغان ملت کی پرامن زندگی کے لیے راہ حق کے مجاہدین کی نصرت کریں اور باطل کو تباہ و برباد کریں۔  وما ذالک علی اللہ بعزیز ۔ والسلام

امارت اسلامیہ افغانستان

18/ رجب المرجب 1439 ھ بمطابق  04 / اپریل   2018 ء

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*