امریکی اعلی حکام کے پروپیگندے کے متعلق ترجمان کا ردعمل

جمعہ کے روز 13/اپریل 2018ء کو امریکی وزیر دفاع، چیف آف آرمی اسٹاف اور وزارت خارجہ کے نامزد وزیر  نے امریکی کانگریس کو ایک بارپھر بےبنیاد معلومات فراہم کیں۔

افغانستان کے متعلق امریکی عوام کو ورغلانے کی کوشش کی  اور ماضی کی باتوں کو دہراتے ہوئے  ان حقائق پر چشم پوشی کی،جس کی افغانستان میں پیشرفت کا کوئی موقع نہیں ہے۔

انہوں نے ماضی کے مطابق صرف ان معلومات پر تکیہ  کرلی، جو ان کے غلاموں نے اپنی بقاء اور ذاتی مفادات کی تحفظ کی خاطر فراہم کی تھی اور انہیں  افغانستان میں موجود رہنے  پر ابھارنے اور جنگ جاری رکھنے کی خاطر دی گئی تھی۔

اس جنگ کو  آخر کار افغان ہی جیتی گی ان شاءاللہ،  افغانی  کو بیرونی غاصب قوتوں سے نفرت اور اسلامی نظام سے بےدریغ محبت کی وجہ سے اس بات کو   پرعزم  ہے کہ  جارحیت کے خلاف مزاحمت میں تیزی لانا مسئلے کا  واحد حل ہے۔

آئندہ سال امریکہ اور اس کے افغان کاسہ لیسوں کے لیے نہایت برا سال ہوگا،ان کی ہلاکتوں میں مزید اضافہ  ہوگا۔ امارت اسلامیہ کے مجاہدین کے حوصلے بہت بلند ہیں، بہار کے چند دنوں میں ملک کے مختلف علاقوں میں دشمن کے خلاف جنگ میں تیزی اور انہیں بھاری نقصان پہنچنے سے ظاہر ہوتا ہے کہ افغان عوام کامیابی کی جانب بہت تیزی کی حالت میں ہے۔

امریکی حکام وہ  کچھ مشاہدہ کریگا، جنہیں انہیں انتظار نہیں تھا۔

ذبیح اللہ مجاہد ترجمان امارت اسلامیہ

27/ رجب المرجب 1439 ھ بمطابق 13 / اپریل 2018 ء

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*