امریکی سفارتخانہ تل ابیب سے بیت المقدس منتقل کرنے کے حوالے سے امارت اسلامیہ کا اعلامیہ

امریکی صدر ٹرمپ کی جانب سے چند ماہ قبل مسلمانوں کے قبلہ اول اور مقبوضہ فلسطین و غصب شدہ سرزمین بیت المقدس کو رسمی طور پر  اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرلیا اور اب عملی طور پر امریکی سفارت خانے کو تل ابیب سے بیت المقدس منتقل کرلیا۔

امریکہ کے اس مغرور ، لاقانون اور ظالمانہ اقدام کی امارت اسلامیہ پرزور الفاظ میں مذمت کرتی ہے  اور اسے تمام مسلمانوں اور عالمی تسلیم شدہ اصولوں کے خلاف جارحیت حامی اور ظالم پرور قدم سمجھتی ہے۔

دنیا کے 128 ممالک نے امریکہ کی جانب سے بیت المقدس کے غصب شدہ علاقے کو اسرائیلی صہیونستی رژیم کے دارالحکومت تسلیم کرنے سے انکار کرلیا، مگر اس کے باوجود امریکہ نے دنیا کے مطالبے کے خلاف قدم اٹھایا۔

امارت اسلامیہ امریکہ کی جانب سے فلسطینیوں کے خلاف صہیونستی رژیم کی حمایت سرکاری دہشت گردی سے تعاون کی عظیم مثال سمجھتی ہے اور امریکہ کے اس عمل کے خلاف اسلامی اور آزاد دنیا سے ردعمل کا مطالبہ کرتی ہے۔

امارت اسلامیہ باالخصوص اسلامی ممالک اور حکومتوں کو بتاتی ہے کہ مظلوموں کا ساتھ دیجیے، ظالموں کے ظلم  کو لگام لگا دیں اور مظلوم فلسطینی عوام کی سیاسی، اخلاقی اور عملی حمایت کریں۔

امارت اسلامیہ افغانستان

28/ شعبان المعظم 1439 ھ بمطابق 14 / مئی 2018 ء

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*