دشمن آپریشن الخندق سے پریشان

آج کی بات

 

مجاہدین نے الخندق آپریشن کے آغاز سے اب تک بلند مورال اور نئی حکمت عملی کے ساتھ دشمن پر شدید حملے کیے ہیں۔ مختلف علاقوں میں دشمن کو سخت نقصان پہنچایا گیا ہے۔ مجاہدین نے دشمن کی فوجی گاڑیاں اور ہتھیار ضبط کر لیے ہیں۔ اُسے متعدد علاقوں سے پسپا کر دیا گیا ہے۔

قلعہ زال، کوہستان، بلچراغ اور تالا و برفک جیسے اضلاع مکمل طور پر فتح ہو چکے ہیں۔ دشمن نے ان اضلاع پر دوبارہ قبضہ کرنے کی بھرپور کوشش کی، لیکن وہ ناکام رہا۔ اُسے بھاری جانی و مالی نقصانات کا سامنا کرنا پڑا۔ مجاہدین نے گزشتہ دو ہفتوں سے غزنی، پکتیکا مرکزی شاہراہ بند کر رکھی ہے، جس سے دشمن شدید بے چین ہے۔ اُس نے یہ شاہراہ کھولنے کے لیے بہت کوشش کی، لیکن وہ مجاہدین کی مزاحمت کے سامنے ٹھہر نہیں سکا۔ اب بھی اس شاہراہ پر مجاہدین کا کنٹرول ہے۔

بہادر مجاہدین نے صوبہ فراہ کے دارالحکومت پر کئی اطراف سے حملہ کیا اور شہر کا زیادہ تر حصہ اپنے کنٹرول میں لے لیا ہے۔ مرکزی جیل توڑ دی گئی ہے۔ انٹیلی جنس دفتر سمیت متعدد سرکاری عمارتوں پر بھی مجاہدین کا کنٹرول ہے۔ درجنوں بکتر بند گاڑیاں، ٹینک اور بڑے پیمانے پر ہتھیار بھی غنیمت میں ملے ہیں۔ پچاس سے زائد اہل کار ہلاک ہوئے ہیں۔ علاوہ ازیں صوبہ اروزگان میں بھی دشمن کو بہت سے علاقوں سے پسپا کر دیا گیا ہے۔ ان فتوحات میں مجاہدین کو بھاری مقدار میں ہتھیار اور فوجی سامان غنیمت میں ملا ہے۔ دشمن کو بھاری جانی و مالی نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ مفتوحہ علاقوں کے مظلوم عوام دشمن کے ظلم سے محفوظ ہیں۔

تازہ ترین حملوں نے ثابت کر دیا ہے کہ اس تاریخی معرکے میں مجاہدین کا پلڑا بھاری ہے۔ دشمن جتنا بھی زور آزمائی کرے، شکست اس کا مقدر ہے۔ دشمن کو امارت اسلامیہ کی قیادت میں عوامی مزاحمت کا سامنا ہے۔ مجاہدین اللہ تعالی کی رضا کے لیے جارحیت پسندوں کے خلاف اسلام کے دفاع اور ملک کی آزادی کے لیے مقدس جہاد میں مصروف ہیں۔ ان کے اہداف مقدس ہیں۔ حوصلے بلند ہیں۔ لہذا کامیابی انہیں ملے گی۔

الخندق آپریشن کے تحت افغانستان کے مختلف حصوں میں دشمن پسپائی کا شکار ہے۔ بہت سے علاقوں پر مجاہدین کا کنٹرول ہے۔ بڑے پیمانے پر وسائل اور ہتھیار غنیمت میں ملے ہیں۔ بادغیس میں 15 کمانڈروں کی قیادت میں 500 اہل کاروں نے کابل حکومت سے الگ ہو کر امارت اسلامیہ میں شمولیت کا اعلان کر دیا ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*