سرپل و فراہ میں فتوحات، 30 کمانڈوز قتل، گاڑی و کافی اسلحہ غنیمت

الخندق آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے سرپل اور فراہ صوبوں میں دشمن کے مراکز پر حملہ کیا۔

اطلاعات کے مطابق بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب صوبہ سرپل کے صدر مقام سرپل شہر کے بلغلی کے علاقے میں مجاہدین فوجی چوکیوں پر ہلکے و بھاری ہتھیاروں سے وسیع حملہ کیا، جس کے نتیجے میں اللہ تعالی کی نصرت سے دو چوکیاں فتح ہونے کے علاوہ 5 اہلکار ہلاک جبکہ 9 زخمی اور دیگر فرار ہونے میں کامیاب ہوئے اور  مجاہدین نے ایک راکٹ لانچر، ایک امریکی گن اور دیگر  فوجی سازوسامان غنیمت کرکے بحفاظت اپنے مراکز کو لوٹ گئے۔

صوبہ فراہ سے موصولہ رپورٹ کے مطابق منگل اور بدھ کی درمیانی شب ضلع پرچمن کے لرون بازار اور تنگی کے علاقوں  میں مجاہدین نے فوجی مراکز اور چوکیوں پر اسی نوعیت کا حملہ کیا، جو تین گھنٹے تک جاری رہا، جس کے نتیجے میں 9 چوکیاں ، 8 دفاعی لائنیں  اورلرون بازار، صدرباط، دشت غلا، دہگنہ، دہ ترکان، خشہ، درہ ملکان، میدان ریز، خرماشک اور دہ مالگان کے وسیع علاقے فتح ہوئے اور وہاں تعینات اہلکاروں میں سے 25 کمانڈوز  ہلاک جبکہ ڈسٹرکٹ  پولیس چیف ابراہیم سیمت درجنوں زخمی ہوئے، جنہیں ہیلی کاپٹروں کے ذریعے منتقل کرلیے گئے۔

ذرائع کے مطابق مجاہدین نے ایک فوجی رینجر گاڑی اور کافی مقدار میں مختلف النوع ہلکے و بھاری ہتھیار وغیرہ  غنیمت کرلی۔

واضح رہےکہ کمانڈوز کو دو روزقبل ہیلی کاپٹروں کے ذریعے مذکورہ مراکز اور چوکیوں میں تعینات کیے گئے تھے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*