بدخشان اور پکتیکا میں 30 جنگجو اور پولیس اہلکار سرنڈر

مقامی جنگجوؤں اور پولیس اہلکاروں نے بدخشان اور پکتیکا صوبوں میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین کی دعوت کو لبیک کہہ کر مخالفت سے دستبردار ہوئے۔

آمدہ رپورٹ کے مطابق گذشتہ تین روزہ جنگ بندی کے دوران صوبہ بدخشان کے وردوج اور پیشکان اضلاع میں نام نہاد قومی لشکر کے  14 جنگجوؤں اور پولیس اہلکارو ں نے حقائق کا ادراک کرتے ہوئے مخالفت سے دستبردار اور مجاہدین سے آملے۔مجاہدین نے ان کا پرتپاک استقبال کیااور ان کے اس اقدام کو سراہا اور سرنڈر میں ہونے والوں میں سے 10 اہلکار ضلع وردوج جبکہ 4 ضلع پیشکان کے رہائشی ہیں۔

دوسری جانب صوبہ پکتیکا ضلع جانی خیل کے یعقوب چمبر، ہستی، نعیم قلعہ، شیرعلی قلعہ، ساکن برلک، زڑہ قلعہ اور فیضو قلعہ کے باشندوں 16 پولیس اہلکاروں اور مقامی جنگجوؤں نے مجاہدین کی دعوت کو لبیک کہہ کر ان سے آملے، جن میں عبدالجلال ولد رسول خان، عبدالنبی ولد عبدالجلال، عبدالہادی ولد عبدالجلال، عبدالقیوم ولد دادگل، داؤد ولد محمدوصیل، ولی خان ولد حاجی محمد، نعیم الحق ولد اٹک، حبیب اللہ ولد عصمت اللہ، عجب خان ولدمحمدبشیر، جانو ولد سیدمحمد،سردار  ولد مختار، سیف ولد حیدرخان، دولت ولد گل داد، فیضان ولد شیرگل، مؤمن ولد حکیم اور محمدنعیم ولد ظفرخان شامل ہیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*