ننگرہارمراکز پر حملے، فتوحات،کمانڈروں سمت 43 ہلاک و زخمی

الخندق آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے صوبہ ننگرہار میں دشمن کے مراکز ، چوکیوں اور کاروان پر حملہ کیا۔

تفصیل کےمطابق پیر اور منگل کی درمیانی شب ضلع خوگیانی کے وزیر کے علاقے حکیم آباد کے مقام پر مجاہدین نے فوجی مرکز اور آس پاس چوکیوں پر ہلکے و بھاری ہتھیاروں سے حملہ کیا،جس کے نتیجے میں اللہ تعالی کی نصرت سے دو چوکیاں مکمل طور پر فتح ہوئیں اور وہاں تعینات ہلکاروں میں سے کمانڈر نصیراحمد سمیت 6 ہلاک جبکہ 7 زخمی  اور ساتھ ہی تازہ دم اہلکاروں کو بھی نشانہ بنایا،جس کے نتیجے میں ایک فوجی ہلاک جبکہ پانچ زخمی اور دو ٹینک بھی تباہ ہوئے اور مجاہدین نے کافی مقدار میں اسلحہ وغیرہ غنیمت کرلی۔

ذرائع کے مطابق دشمن کی جوابی فائرنگ سے ایک مجاہد بھی شہید ہوا۔ تقبلہ اللہ

دوسری جانب پیر کےروز سہ پہر کے وقت مجاہدین نے ضلع شیرزاد کے مرکز پر میزائل داغے، جس کے نتیجے میں 2 اہلکار ہلاک جبکہ 3 زخمی، ایک رینجر گاڑی اور مرکز کی برج ہوئی۔

اسی طرح پیر کےروز صبح کے وقت ضلع حصارک کے مرکز پر مجاہدین نے اسی نوعیت کا حملہ کیا،جس میں پولیس آفسر ہلاک جبکہ تین جنگجو زخمی ہوئے۔

نیز رات کے وقت ضلع غنی خیل کے مرکز ، آس پاس دفاعی چوکیوں اور پولیس یونٹ پر مجاہدین نے حملہ کیا،جس کے نتیجے میں 6اہلکار ہلاک جبکہ ایک زخمی ہوا اور پولیس مرکز پر ہونے والے حملے میں ایک رینجر گاڑی بھی تباہ بھی جل کر خاکستر ہوئی۔

رپورٹ کے مطابق پیر کےروز سہ پہر کے وقت ضلع بٹی کوٹ کے شینوار قلعہ کے علاقے میں مجاہدین نے تین فوجیوں کو  موت کے گھاٹ اتار دیا۔

ذرائع کے مطابق پیرکےروز مغرب کے وقت صدر مقام جلال آباد شہر کے قریب انگورباغ کے علاقے میں پولیس گاڑی پر ہونے والے حملے کے دوران دو اہلکار ہلاک جبکہ تین زخمی اور گاڑی بھی تباہ ہوئی۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*