کابل انتظامیہ کی جانب سے مذاکراتی افواہات  پھیلانے کے متعلق ترجمان کا بیان

جمعرات کے روز 05/ جولائی سے کابل انتظامیہ کے نام نہاد امن کونسل کے اراکین  اور بعض دیگر صوبائی اعضاء  افواہات پھیلا رہے ہیں کہ جلد ہی امارت اسلامیہ سے مذاکرات کا آغاز ہوگا۔

ہم ان دعوؤں کی ایک بار پھر تردید کرتے ہیں،  امارت اسلامیہ کا کوئی ایسا منصوبہ کسی مقام پر بھی نہیں ہے، کابل انتظامیہ کے مختلف شعبہ جات اور افراد اس طرح افواہات سے اذہان کو مغشوش کرنا چاہتا ہے، مذاکرات کے متعلق امارت اسلامیہ کی پالیسی واضح ہے، جسے متعدد بار اعلان کی جاچکی ہے۔ بنیادی مسئلہ استعماری کی جارحیت ہے، جو تمام مصائب و مشکلات کی ماں تصور کی جاتی ہے۔

جارحیت کی طرح اہم اور کامل بیرونی مسئلہ پر بےاختیار پہلوؤں سے گفتگو بے فائدہ ہے۔

اہل وطن  اس بارے میں کابل انتظامیہ کی لاچاری اور خوف پر مبنی رپورٹوں کو شائع کروانے پر کوئی توجہ نہ دیں۔

ذبیح اللہ مجاہد ترجمان امارت اسلامیہ

22/ شوال المکرم 1439 ھ بمطابق  06/ جولائی 2018ء

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*