ننگرہار و پکتیا، صلیبی وحشت، 39 بچے،خواتین اور مرد شہید

جارح امریکی صلیبی و کٹھ پتلی فوجوں نے ننگرہار اور پکتیا صوبوں میں نہتے عوام کا جینا حرام کردیا۔

آمدہ رپورٹ کے مطابق جارح امریکی و کٹھ پتلی فوجوں نے جمعرات اور جمعہ کی درمیانی شب صوبہ ننگرہار ضلع خوگیانی کے  مملہ بازار پر چھاپہ مار کر وحشت و بربریت کا مظاہرہ کرتے ہوئے متعدد دکانوں، ایک مسجد، ایک پٹرول پمپ کو بموں سے تباہ کردیے، جبکہ پارکنگ میں کھڑی سویلین کی 22 گاڑیوں کو آگ لگا کر نذرآتش کردیے۔

ذرائع کے مطابق وحشی درندوں نے بربریت کے دوران 6 دکانداروں اور ڈرائیور وں کو شہید جبکہ 4 کو زخمی کردیے۔ اناللہ وانآ الیہ راجعون

دوسری جانب جارح صلیبی و کٹھ پتلی فوجوں نے صوبہ پکتیا ضلع زرمت کے مربوطہ علاقوں میں جمعرات کےروز سے وحشت کا آغاز کیا ہے اور عینی شاہدین کے صلیبی امریکی طیارو ں نے شملزئی گاؤں میں مقامی افراد کے گھروں پر شدید بمباری کی،جس کے نتیجے میں خاصدار نامی شخص کا مکان مکمل طور پر تباہ اور وہاں موجود 15 افراد جن میں اکثریت خواتین اور بچوں کی تھی، شہید ہوئے اور بعد میں جب علاقہ مکین شہداء کی اجساد کو نکالنے کے لیے وہاں پہنچیں، تو سفاک صلیبی دشمن نے پھر بمباری کی اور ابتدائی اطلاعات کے مطابق شہداء کی تعداد 35 تک جا پہنچی ہے۔ اناللہ وانآ الیہ راجعون

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*