الخندق آپریشن فتوحات،کمانڈر سمیت 32 ہلاک و زخمی، غنائم

الخندق آپریشن کے سلسلے میں امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے کابل، میدان، جوزجان،غزنی، تخاراور پکتیا صوبوں میں نشانہ بنایا۔

تفصیل کے مطابق بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب صوبہ میدان ضلع سیدآباد کے حسن خیل، سپین کلینک اور ترہ خیل کے علاقوں  میں واقع چوکیوں پر مجاہدین نے ہلکے وبھاری ہتھیاروں سے حملہ کیا،جس کے نتیجے میں اللہ تعالی کی نصرت سے حسن خیل اورسپین کلینک نامی چوکیاں فتح اور وہاں تعینات اہلکار فرار ہوئے،جبکہ ترہ خیل کے مقام پر پانچ اہلکار ہلاک ہوئے۔

ذرائع کے مطابق دشمن کی جوابی فائرنگ سے ایک مجاہد شہید جبکہ دو زخمی ہوئے۔ تقبلہ اللہ

دریں اثناء صوبہ جوزجان ضلع خانقاہ کے شاہ مرزا کے علاقے میں چوکی مجاہدین کے حملے میں فتح اوروہاں تعینات کمانڈر اکبر سمیت 4 ہلاک جبکہ 2 زخمی اور مجاہدین نے ایک ہیوی مشین گن، ایک راکٹ لانچر، دو کلاشنکوفیں اور دیگر فوجی سازوسامان غنیمت کرلی۔

دشمن کی جوابی فائرنگ سے ایک مجاہدین بھی شہید ہوا۔ تقبلہ اللہ

اسی طرح بدھ کے روز صبح کے وقت صوبہ کابل ضلع بگرامی کے مربوطہ علاقے میں بم دھماکہ سے فوجی رینجر گاڑی تباہ اور اس میں سوار 5 اہلکار ہلاک و زخمی ہوئے۔

صوبہ غزنی سے اطلاع ملی ہےکہ بدھ اورجمعرات کی درمیانی شب ضلع قرہ باغ کے مرکز کے قریب شاف اور ولی داد کے علاقوں میں مجاہدین کے کاروائی کے دوران دو پولیس چوکیا‌ں فتح اور وہاں تعینات اہلکاروں میں سے 11 ہلاک جبکہ متعدد زخمی اور دیگر فرار ہونے میں کامیاب ہوئے،اس کے علاوہ مجاہدین نے ایک فوجی رینجر گاڑی اور کافی مقدار میں مختلف النوع ہلکے و بھاری ہتھیار غنیمت کرلی۔

رپورٹ کے مطابق بدھ کے روز صبح کے وقت صوبہ تخار ضلع خواجہ غار کے مربوطہ علاقوں میں کٹھ پتلی فوجوں نے مجاہدین کے خلاف کاروائی کا آغاز کیا، جو دن بھر جاری رہا، جس کے نتیجے میں دشمن کو جانی و مالی نقصانات کا سامنا ہوا، لیکن تفصیل فراہم نہ ہوسکی ۔

اسی طرح بدھ کے روز شام کے وقت صوبہ پکتیا ضلع سمکنی کے لواڑہ کے علاقے میں مجاہدین اور  کٹھ پتلی فوجوں کے درمیان چھڑنے والی لڑائی میں 5 سیکورٹی اہلکار ہلاک جبکہ دیگر فرار ہوئے،جبکہ شام کے وقت صدر مقام گردیز شہر کے چھاؤنی کے علاقے میں مجاہدین کے سنائیپرگن حملے میں ایک جنگجو  ہلاک ہوا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*