تخار، قندوز و بغلان میں جھڑپیں، 26 ہلاک و زخمی

کمانڈو، کٹھ پتلی فوجوں اور پولیس اہلکاروں پر امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے الخندق آپریشن کے سلسلے میں تخار، قندوز  اور بغلان صوبوں میں حملہ کیا۔

اطلاعات کے مطابق جمعرات کےروز صبح کے وقت صوبہ تخار ضلع خواجہ غار کے قرلق اور تاش کوتل کے علاقوں میں کٹھ پتلی فوجوں نے مجاہدین کے مراکز پر حملہ کیا،جنہیں مجاہدین کی شدید مزاحمت کا سامنا ہوا،جس کے نتیجے میں 4 فوجی ہلاک جبکہ 3 زخمی اور ایک ٹینک تباہ اور دیگر اہلکار فرار ہوئے۔

صوبہ قندوز سے آمدہ رپورٹ کے مطابق صدر مقام قندوز شہر کے جرگزر کے علاقے میں رات کے وقت مجاہدین کے حملے میں دو جنگجو ہلاک جبکہ دیگر فرار ہوئے اور  بدھ کے روز مغرب کے وقت سیصد فامیلی کے علاقے میں ایک جنگجو اور ضلع علی آباد کے مربوطہ علاقے میں جنگجوؤں پر ہونے والے حملے میں شرپسند ہلاک جبکہ دوسرازخمی ہوا۔

دوسری جانب جمعرات کےروز علی الصبح ضلع چاردرہ کے سرک بالا، وردگان، غربان، گل باغ اور قریہ خانہ کے علاقوں پر جارح امریکی و کٹھ پتلی فوجوں نے حملہ کیا، جنہیں شدید مزاحمت کا سامنا ہوا اور لڑائی چھڑگئی، جو دن بھر جاری رہی، جس کےنتیجے میں دشمن نے جانی و مالی نقصانات اٹھاتے ہی فرار کی راہ اپنالی۔

رپورٹ کے مطابق جمعرات کےروز علی الصبح صوبہ بغلان ضلع دوشی کے کیلگی کے علاقے میں مجاہدین دشمن پر حملہ کیا،جس کے نتیجے میں دو کمانڈوز ہلاک جبکہ پانچ زخمی ہوئے۔

دریں اثناء ضلع برکہ کے مرکز کے قریب کے مجاہدین کے حملے میں ایک فوجی ٹینک تباہ ہونے کے علاوہ تین اہلکار ہلاک جبکہ پانچ زخمی ہوئے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*