دشمن پھر سفاک بن گیا

آج کی بات

 

پچھلے کچھ دنوں سے جارحیت پسندوں اور کابل انتظامیہ نے ایک بار پھر مظلوم عوام کے قتل عام اور گھر مسمار کرنے کا سلسلہ تیز کر دیا ہے۔ دشمن کے حملوں اور چھاپوں میں درجنوں نہتے شہری شہید اور زخمی ہوگئے۔ بدقسمتی سے افغانستان بھر میں یہ سلسلہ جاری ہے۔ دشمن کی کارروائیوں کی کچھ تفصیل دیکھیے:

گزشتہ روز حملہ آوروں کے ڈرون حملے میں صوبہ پکتیا کے ضلع چکمیو کے علاقے نازی گاؤں میں 4 شہری شہید اور 14 بچے زخمی ہوئے۔ ننگرہار کے ضلع شیرزاد کے علاقے پیٹلاو میں دشمن نے چھاپہ مارا۔ جس کے نتیجے میں 10 افراد شہید ہوگئے۔ اس کے بعد دشمن نے ایک بار پھر اس ضلع کے علاقے سرخ آب میں لوگوں کے گھروں پر چھاپہ مارا۔ اس کارروائی میں 19 مظلوم شہری شہید ہوئے۔ اس کے علاوہ ننگرہار کے ضلع خوگیانو کے علاقہ ڈیسار میں دشمن نے چھاپہ مارا۔ اس میں خواتین اور بچوں سمیت 16 عام شہری شہید ہوئے۔

صوبہ اروزگان کے دارالحکومت ترین کوٹ کے قریب ناوہ کے علاقے میں دشمن کی گولہ باری کے نتیجے میں چھ لڑکیاں شہید اور دو بچے زخمی ہوئے۔ مشترکہ دشمن نے ترین کوٹ کے علاقے کوٹوال میں 7 افراد کو انتہاہی بہیمانہ طریقے سے شہید کر دیا۔ صوبہ پکتیکا کے ضلع وڑممی میں فورسز نے مقامی آبادی پر گولہ باری کی، جس میں خواتین اور بچوں سمیت ایک خاندان کے 8 افراد شہید ہوگئے۔

دشمن ہوش کے ناخن لے۔ وہ بس قدر بھی سربریت کا ارتکاب کر لے، افغان مجاہد قوم اسلامی حکومت اور وطن کی آزادی کے مؤقف سے پیچھے نہیں ہٹے گی۔ مجاہد عوام نے جس طرح سترہ برس کے دوران مجاہدین کی بھرپور حمایت کی ہے، وہ آئندہ بھی اسی جذبے کے ساتھ مجاہدین کی حمایت کرتے رہیں گے۔ مجاہدین اسلامی شعائر، قومی مفادات اور مظلوم عوام کی حفاظت کریں گے۔ اس کے لیے کسی بھی قربانی سے گریز نہیں کریں گے۔

دشمن یاد رکھے کہ معصوم لوگوں کا بدلہ ضرور لیا جائے گا۔ ہمیں یقین ہے اللہ تعالی سفاک دشمن سے مظلوم عوام کا بدلہ ضرور لے گا۔ امارت اسلامیہ پر عزم ہے کہ اپنے عوام کی جان، مال اور عزت کی حفاظت کرے۔ وہ سفاک دشمن سے مظلوم عوام کا بدلہ لے گی۔

ان شاء اللہ تعالی

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*