افغانستان میں ریڈکراس کراس عالمی کمیٹی کی سرگرمیوں کے دوبارہ آغاز کے حوالے سے اعلامیہ

امارت اسلامیہ افغانستان اپنی پالیسی کی رو سے ملک میں تمام فلاحی اداروں کی سرگرمیوں کو اجازت دیتی ہے کہ افغان مظلوم اور جنگ زدہ عوام کو خصوصی پر لڑائی سے متاثرہ افراد کو سیاسی ملحوظات کے بغیر عالمی انسانی اصول کے بناء پر انسانی امداد پہنچا دیں۔ فلاحی ادارے اپنے قوانین کی روشنی میں اپنی امداد ایسی حالت میں تنظیم کریں کہ غیرضروری اور نمائشی اخراجات کی جگہ اپنی امداد کی مقصد کو شدید محتاج افراد پر رکھے۔

افغانستان میں ریڈکراس عالمی کمیٹی کی سرگرمیوں کی کیفیت کے بارے میں امارت اسلامیہ کو چند اہم ملاحظات تھے، ریڈکراس کی جانب سے ان ملاحظات پر توجہ نہ دینے کی وجہ سے امارت اسلامیہ نے 14/ اگست 2018ء کو اس سیکورٹی معاہدہ کو لغوہ اعلان کیا،جس کی رو سے ریڈکراس پورے ملک میں مکمل تسلی سے اپنی سرگرمیاں سرانجام دیتے، ریڈکراس نے امارت اسلامیہ کی جانب سے سیکورٹی معاہدہ لغوہ کرنے اعلان کے بعد  اپنی سرگرمیوں کو روک دیے اور امارت اسلامیہ کیساتھ مذکورہ موضوع پر افہام وتفہیم کا مطالبہ کیا۔

مملکت قطر کے دارالحکومت دوحہ شہر میں امارت اسلامیہ کے عہدیداروں اور ریڈکراس عالمی کمیٹی کے حکام کے درمیان ان موضوعات پر دو روزہ بحث ہوئی،جن پر امارت اسلامیہ کو ملاحظات تھے ۔ افغانستان میں ریڈکراس عالمی کمیٹی کی سرگرمیوں کے بارے میں جانبین کے درمیان موافقہ ہوا۔

امارت اسلامیہ اس اعلامیے کے ذریعے اس سیکورٹی معاہدے  کو جو اس سے قبل افغانستان میں ریڈکراس عالمی کمیٹی کیساتھ کیا گیا تھا، اسے پھر معتبر سمجھتی ہے اور تمام مجاہدین کو ہدایت دیتی ہے کہ ریڈکراس عالمی کمیٹی کی سرگرمیوں کے لیے راہ ہموار کریں اور اس ادارے کے کارکنوں اور مربوطہ اجناس کی حفاظت پر توجہ دیں۔

والسلام

امارت اسلامیہ افغانستان

02/ محرم الحرام 1440 ھ بمطابق 19/ اکتوبر 2018 ء

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*